عید قربان اور یہ آلایش ۔۔۔۔۔؟

(By: Muhammad Feroz)

صٖفائی  نصف ایمان ہے ۔جی ہاں!اسلام میں پاکیزگی و  صفائی کی بہت اہمیت ہے یہاں تک کے اس کو ایمان کا ادھا حصہ قرار  دیا گیا ہے۔کیونکہ اللہ تعالی پاکیزگی کو پسند فرماتا ہے کہ انسان خود  بھی صاٖف ستھرا   رہے اور  اپنےآس پاس کی جگہ کو   بھی صاف رکھیں ۔لیکن جیسے ہی عید قرباں آتی ہے ہمارے ماحول میں صفای کا نام و نشان بھی نیہں دیکھا جاتا جگہ جگہ  آلایشوں کا ڈھیر   تو کہیں   جانوروں کی با قیات نظر آتی ھیں ۔

عید قرباں کی آمد سے قبل تو ہمارے حکومتی عہدہ دار یہ دعؤے کرتے  نظر  آتے ھیں کہ  عید کے دن صفائی کا پورا خیال رکھا جأے گا اور آلأیشوں کو ٹھکانے لگایا جأے گا لیکن افسوس ہر سال کی طرح اس سال بھی حکومتی دعؤے دھرے کے دھرے رہے گۓ عید قرباں سے قبل بھی ہر جگہ کچرے کے ڈھیر اپنے اپنے علاقوں کی زینت بنے ہوے تھے اور اب اس عید قرباں کے بعد آلأیشوں نے اس زینت پر چار چاند لگادیٔے ہیں خصوصا گنجان آباد علاقوں یعنی لیاقت آباد ،لانڈھی ،کورنگی ،اورنگی اور ملیر جیسے علاقوں میں تو تعفن پھیل رہا ہے جس کے باعث بہت سی بیماریاں پھیلنے کا خطرہ ہے۔حکومتی دعؤی تو یہ بھی تھا کہ شہر میں مچھر مار اسپرے کیے جأیں گے لیکن حکومت نے یہ بات واضح نہیں کی کہ یہ مچھر مار اسپرے اس وقت کیے جأیں گے جب شہر کی نصف آبادی مچھر سے متاثر ہو جاے گی حکومت سے گزارش ہے کہ کم از کم کبھی تو اپنے کہے پر عمل کیا کریں کہ یہ  شہر صرف ہمارا نہیں آپ کا بھی ہے اگر ہر علاقے کے ناظم اپنا کام باخوبی انجام دیں تو عوام کو ان تکالیف سے گزرنے کی ضرورت نہ پڑے  اور ہمارا ملک دوسرے ملکوں کی طرح صاف ستھرا اور خوبصورت لگے.

لیکن یہاں ذمہ داری صرف حکومت یا ناظم ہی کی نہیں بلکہ کچھہ ذمہ داریاں عوام پر بھی عائد ہوتی ہیں کہ وہ اپنے علاقوں کی صفأی  کا خود بھی خاص خیال رکھیں ۔ جو کام اپنی مدد آپ ہوسکتے  ہیں انہیں حکومت پر چھوڑنے کے بجاے خود سے کرکے اپنے شہر کو صاف ستھرا بنأیں۔

Share this page:

0 Comments

Write a Comment

Your email address will not be published.
Required fields are marked *